بریکنگ نیوز:پٹرول بحران شدت اختیار کر گیا، شہری خوار

لاہور(ویب ڈیسک)شہر میں چوتھے روز بھی پٹرول کی قلت دیکھنے کو نظر آئی جس کی وجہ نجی پٹرول پمپس سپلائی نہ آنے کے باعث شہر ی پٹرول کے حصول کیلئے مختلف علاقوں کے چکر لگانے پر مجبور ہیں۔واضح رہے کہ گزشتہ دنوں حکومت کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی گئی تھی جس

کے بعد 90 روز میں پٹرول کی قیمت میں 43 اور ڈیزل کی قیمت میں 47 روپے کمی ہوئی ہے لیکن اس کے باوجود اشیائے ضرویہ کی قیمتیں آسمان پر موجود ہیں۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی تو ہوئی مگر عوام کی پریشانی کم ہونے کی بجائے بڑھ گئی، لاہور بھر میں پٹرول ناپید ہوگیا، شہری پیٹرول کی تلاش میں خوار ہو گئے۔شہریوں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ کی غفلت اور نجی کمپنیوں کی بد دیانتی کے باعث پٹرول کی سپلائی میں بہت زیادہ کمی آئی ہے۔ کئی مالکان نے پٹرول ہونے کے باوجود پمپ بند کر لئے ہیں اسی وجہ سے پٹرول نہیں مل رہا۔جب کہ گزشتہ روزشہر میں سے 8 لاکھ لیٹر پٹرول کی کمی دیکھنے کو ملی ہے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہوسکتا ہے کورونا کے ہاٹ اسپاٹ علاقوں کو بند کرنا پڑے، ان علاقوں میں لاک ڈاؤن کے دوران پھرگھروں میں کھانا پہنچانے کیلئے ٹائیگرفورس کی ضرورت پڑے گی، لوگ اب بھی ایس اوپیز پر عمل شروع کردیں، تو ہم مشکل وقت سے بچ سکتے ہیں، کیونکہ کورونا نےپھیلنا ہے، اس کوپھیلنے سے کوئی نہیں روک سکتا۔انہوں نے ٹائیگرفورس کے رضاکاروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لوگ ایس اوپیز پر عمل شروع کردیں، تو ہم مشکل وقت سے بچ سکتے ہیں۔ ٹائیگرفورس کے رضاکاروں کا کام لوگوں کو ایس اوپیز کے بارے آگاہ کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ میں یومیہ 2ہزار، اٹلی اسپین میں 15سوسے 2ہزار اموات ہوئیں، تین مہینے کے بعد پاکستان میں کل اموات 1750سے زیادہ ہیں، ابھی اموات بڑھیں گی، کورونا ایک ایسا وائرس ہے جو بہت تیزی کے ساتھ پھیلتا ہے۔عمران خان نے کہا کہ ٹائیگرفورس کو باقاعدگی سے روزانہ کی ہدایات بھیجا کریں گے، آپ کو آگاہ کیا جائے گا کہ کون سے علاقے ہاٹ اسپاٹ ہیں۔ہوسکتا ہے کہ ہاٹ اسپاٹ علاقوں کو بند کرنا پڑے، پھر لاک ڈاؤن کے دوران ان علاقوں میں کھانا پہنچانے کیلئے ٹائیگرفورس کی ضرورت پڑے گی۔اس وقت سب سے زیادہ رضاکاروں کی ضرورت پڑے گی۔انہوں نے کہا کہ کورونا نے پھیلنا ہے، اس کوپھیلنے سے روک نہیں سکتے، لوگوں کو کمروں میں بند کرکے وائرس کو آہستہ کرسکتے ہیں۔لاک ڈاؤن کا نقصان غریبوں کو ہے، امریکا امیر ملک ہے لیکن وہاں لاک ڈاؤن میں لوگوں کو لائنوں میں کھانا دیا جارہا ہے، کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا۔اسی طرح ہندوستان جہاں پہلے ہی غربت زیادہ تھی، وہاں لاک ڈاؤن سے مزید تباہی پھیل گئی ہے۔
sourse content:https://hassannisar.pk/pakistan

50% LikesVS
50% Dislikes